شعبۂ امتحان

{01} یوں تومدارس المدینہ میں ناظمِ مدرسہ ہر درجے کے تمام مدنی منّوں کا(ترتیب وار) تعلیمی و اخلاقی امتحان لیتا ہے ۔ مگر تعلیمی و اخلاقی معیار کو مزید بہتر کرنے کے لئے ہر 3 ماہ بعد ہر درجے کے تمام مدنی منّوں کا تعلیمی و اخلاقی امتحان ایک ساتھ لیا جاتا ہے اور یہ امتحان مدرسے کے ناظم نہیں لیتے بلکہ شعبۂ امتحان کے تحت مقرر کردہ مفتشین سے باقاعدہ جدول بنا کرکروایا جاتا ہے ۔

{02} شعبۂ امتحان کے تحت ہر 3 ماہ بعد سال میں کل 4 امتحانات ہوتے ہیں ۔

{02} شعبۂ امتحان کے تحت ہر 3 ماہ بعد سال میں کل 4 امتحانات ہوتے ہیں ۔

٭امتحان نمبر 2. ششماہی امتحان

٭امتحان نمبر 3. نو ماہی امتحان

٭امتحان نمبر 4. سالانہ امتحان

{03} امتحان لینے کے بعد جو ایّام بچتے ہیں ان ایّام میں مفتشین جن درجات کے مدرسین کو تدریسی تربیت کی ضروت ہوتی ہےان مدرسین کی تدریسی تربیت بھی فرماتے ہیں

مفتشین سے متعلقہ فارمز

{04} شعبۂ امتحان کی طرف سے مفتشین کے لئے تفتیش سے’’ قبل ، دوران اور بعد‘‘مختلف کارکردگیوں کا اندراج کرنے کےلئے درج ذیل پانچ’’5 ‘‘فارمز دیئے گئے ہیں ۔

(1) یومیہ پیشگی و عملی جدول فارم برائےمفتش)

٭ …اس فارم پر مفتشین اپنا پیشگی جدول بناکراور اس جدول کے مطابق ہی ترتیب وار درجات میں جاکر امتحان لیتے ہیں ۔

(2)تفتیشی کارکردگی فارم برائے شعبۂ مدنی قاعدہ و ناظرہ (کل وقتی و جز وقتی)

٭ …شعبۂ مدنی قاعدہ و ناظرہ کے مدنی منّوں کا تعلیمی و اخلاقی امتحان دیئے گئے طریقۂ تفتیش کے مطابق اس فارم پر لیا جاتا ہے۔

(3) تفتیشی کارکردگی فارم برائے شعبۂ حفظ

٭ …شعبۂ حفظ کے مدنی منّوں کا تعلیمی و اخلاقی امتحان دیئے گئے طریقۂ تفتیش کے مطابق اس فارم پر لیا جاتا ہے۔

(4) درجہ کارکردگی فارم برائےمفتش

٭ …درجے کے تمام مدنی منّوں کا امتحان لینے کے بعد درجے کی مجموعی تعلیمی و اخلاقی کارکردگی اور متفرق کارکردگی کا اندراج اس فارم پر کیا جاتا ہے ۔

(5) مدرسہ کارکردگی فارم برائے مفتش

٭ … مدرسے کے تمام درجات کا امتحان مکمل ہونے کے بعدمدرسے کی مجموعی تعلیمی و اخلاقی کارکردگی اور متفرق کارکردگی کااندراج اس فارم پر کیا جاتا ہے ۔